ملی سرگرمیاں

آکولہ میں سہ روزہ ایکسپرٹ دعوتی کیمپ کا انعقاد

 آکولہ میں سہ روزہ ایکسپرٹ دعوتی کیمپ کا انعقاد

السلام علیکم و رحمة الله و بركاته

 

 

حلقہ مہاراشٹر میں ایکسپرٹ داعیان کی تیاری کے لئے ہر سال ایک کیمپ لیا جاتا ہے۔ اس میقات کا پہلا کیمپ بتاریخ 12/11/10 جنوری 2020ء(Iبروز جمعہ، سنیچر، اتوار ) بمقام کوہ نور فنکشن ہال، لکڑ گنج، آکولہ میں منعقد ہوا۔
تفصیلات کے مطابق تین روزہ اس دعوتی کیمپ میں مختلف عنوانات پر تقاریر، مذاکرات، تبصرے و رہنمائی، سوالات وجوابات، اور پچھلے سال میں جو ہوم ورک دیا گیا تھا اس پر کچھ افراد کو اپنی کارکردگی (میری دعوتی کارکردگی) کی رپورٹ پیش کرنا تھا اور سب سے زیادہ منفرد دعوتی فیلڈ ورک رہا۔ اس کیمپ میں مولانا اقبال ملا صاحب (سیکریٹری شعبہ دعوت، مرکز) کے ہمراہ مرکز جماعت کے دو نمایندے جناب محمد زین العابدین منصوری صاحب اور جناب وارث حسین صاحب شریک تھے۔ اور ان ذمہ داران جماعت کی مؤثر رہنمائی شامل رہی۔ دعوتی فیلڈ ورک میں گروپس بنا دیے گئے تھے اور یہ دعوتی وفود کو آکولہ کے مختلف مقامات پر تقسیم کر دیا گیا تھا۔ یہ وفد گھر گھر جاکر اسلام کی دعوت کس طرح دی جاتی ہے گروپ لیڈر اپنے شرکاء کی رہنمائی کرتے گیا۔ جن افراد میں دعوت دی گئی اس میں مختلف مذاہب کے لوگ شامل تھے جیسے دلت، ہندو، جین وغیرہ۔ اور مشاہدہ کرنے پر معلوم ہوا کہ دعوت الی اللہ کا کام بہت آسان ہے ۔ اور اس کام میں پوری ملت اسلامیہ کو انجام دینا اشد ضروری ہے کیونکہ یہ کام فرض کفایہ نہیں ہے بلکہ فرض عین ہے ۔ اور دستور ہند نے بھی ہمیں اس کی آزادی دی ہے، جب مدعو کو دعوت دی جاتی ہے تو وہ بہت دلچسپی سے باتوں کو سنتا ہے گویا کہ وہ خود چاہ رہا تھا کہ مجھے یہ باتیں کہنا۔ مخاطب تک بات پہنچانے کا کوئی موقع ہاتھ سے جانے نہ دے۔ وہ اس کی وجہ سے پہنچانا جاے اس کی ہر سانس اس میں ڈوبی ہوئی ہو، اس اعمال اسی کے تابع ہو، اسے دیکھنے والوں کو صاف محسوس ہو کہ وہ اسی دعوت کے لئے جی رہا ہے۔ ہر طبقہ کے لوگ اسلام کے رنگ میں رنگ جاے ، عام آدمی سے لے کر وقت کے وزیراعظم تک، کہ ان کا اسلام کے بغیر جینا دوبھر ہو جائے۔ اس طرح داعی کو دعوت کا حق ادا کرنا ہوگا۔ہندوستان میں اسلام کی دعوت کے لئے وطنی بھائی اور بہنوں کے دل کے دروازے کھلے ہوتے ہیں ضرورت ہے ان کے دلوں کو دستک دینے کی۔ یہ میدان سارا کا سارا خالی کھڑا ہے ہماری تھوڑی سی کوشش بھی کروڑوں انسانوں کے لئے جہنم سے نجات کا ذریعہ بن سکتی ہے۔ آیے ہم عہد کریں کہ اپنی بستی، گاؤں، قصبے، شہر اور ملک عزیز میں اسلام کی آبیاری کے بیچ ڈالیں تاکہ اس کی ٹھنڈک سے اس ملک کا ہر باشندہ مستفید ہو سکے۔
وہ صبح ہمیں سے آئیں گی (ان شاء اللّہ)

اللّہ تعالیٰ کا احسان عظیم ہے کہ وہ ہمیں اپنی خدمت کا موقع دے رہا ہے اور ہمیں اس تحریک سے وابستہ کیا جس کا مقصد اقامتِ دین ہے۔ اللّہ تمام ذمہ داران جماعت کو اس کا بہترین بدلہ دے اور امت محمدیہ کو جہنم کی آگ سے محفوظ رکھے۔
آمین یارب العالمین

GIO member & student of Suffah Aurangabad (Maharashtra)

Tags
Show More

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button