Sliderجہان خواتین

اسلام خواتین کا محافظ

تبسم بیگم

جی آئی او اورنگ آباد وسط

 

تعصب کی عینک اتار کر ایک نظر زمانہ قدیم پر کی جاے تو اسلام نے ۱۴۰۰ سال پہلے جو حقوق اور تحفظ عورتوں کو دیا ہے شاید ہی کسی نے عطا کی ہو۔ مگر افسوس تعصب کی بیماری نے آج کل کے مسلمانوں کو اس اندھیرے میں لا کھڑا کیا ہے کہ ہر کوئی اس کے اصل حقوق اور تحفظ پر تعصب کرتے ہیں ۔
مگر حقیقت یہ ہے کہ اسلام نے جو تحفظ ،جو عزت، عورت کو دی ہے جو مرتبہ اسلام میں ایک ماں، ایک بیٹی، ایک بہن ،ایک بیوی کا ہے اور کسی مذہب میں نیہں ملتا۔
اگر اسلام عورتوں کی تعلیم و ترقی میں رکاوٹ بنتا تو اسلام کی بیٹیاں جنگ کے میدانوں میں نا ہوتی ۔
اسلام نے عورتوں کو کتنی ترقی دی؟اور کیا بلند مقام عطا کیا؟ قرآن پاک کی مختلف آیات اور احادیث سے اس کا بخوبی اندازہ لگایا جاسکتا ہے ۔
مغرب پرست اسلام پر نکتہ چینی اس لئے کرتے ہیں کیونکہ وہ اصل حقوق وہ فرائض سے ناواقف ہوتے ہیں اسلام نے عورتوں کو وہ مقام عطا کیا ہے جو کسی نے نہیں کیا ۔
ایک عورت جب بحثیت ماں ہو تو اس کے قدموں تلے جنّت ہوتی ہے اور بیٹی تو رحمت لیکن یہ بات سمجھنا ہر کسی کی بس کی بات نہیں ہے ۔
اسلام کی آمد قبل بیٹی کی پیدائش کو ذلت و رسوائی کا سبب قرار دیا جاتا تھا مگر آپ کی آمد کے بعد بیٹی کو احترام اور عزت کا مقام عطا ہوا اسلام نے نا صرف معاشراتی و سماجی سطح پر بلکہ وراثت کا بھی حق دار قرار دیا ۔اسلام ایک ایسا دین ہےجس نے عورتوں کو مکمل حقوق و فرائض سے نوازا ہیں ۔

تو شاہیں ہے ،پرواز ہےکام تیرا
تیرے سامنے آسماں اور بھی ہیں ۔

Tags
Show More

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button