Sliderجہان کتب

بچوں کی تربیت کے رہ نما اصول

اس کتاب میں بہت حکیمانہ انداز میں تربیتِ اطفال کے نفسیاتی اصول اور اسالیب بیان کیے گئے ہیں۔

 ڈاکٹر محمد رضی الاسلام ندوی

بچوں کی تربیت کے موضوع پر برادر مکرم ڈاکٹر محمد طارق ایوبی کی کتاب ‘بچوں کی تربیت کے رہ نما اصول’ پاکر بہت خوشی ہوئی۔ یہ کتاب اصلاً ایک عربی کتاب ‘أولادنا من الطفولۃ الی الشباب’ (مامون مبیض) کا اردو ترجمہ ہے۔ اس میں بہت حکیمانہ انداز میں تربیتِ اطفال کے نفسیاتی اصول اور اسالیب بیان کیے گئے ہیں۔

بچوں کی تربیت کے موضوع پر اردو زبان میں کئی کتابیں موجود ہیں۔ مشہور ماہرِ تعلیم جناب افضل حسین کی کتاب ‘فنِ تعلیم وتربیت’ مرکزی مکتبہ اسلامی پبلشرز نئی دہلی سے عرصہ سے شائع ہورہی ہے اور حال میں اس کا انگریزی ترجمہ بھی طبع ہوگیا ہے۔ دوسری کتاب ڈاکٹر محمد اکرام خاں کی ‘تعلیم و تربیت اور زندگی’ بھی اہم ہے، جو مکتبہ جامعہ نئی دہلی سے شائع ہورہی ہے۔ یہ کتابیں قدیم بھی ہیں اور ان میں تربیتِ اطفال کے ہمہ جہت اور وسیع الأطراف پہلوؤں پر اختصار کے ساتھ گفتگو کی گئی ہے۔ ایوبی صاحب کی ترجمہ کردہ یہ کتاب نئی ہے اور ایک ماہرِ نفسیات کے قلم سے ہے، اس لیے اس کی اہمیت اور قدر و قیمت شک و شبہ سے بالاتر ہے۔

مصنفِ کتاب نے دمشق یونی ورسٹی (شام) کے میڈیکل کالج سے فراغت کے بعد ڈبلن (آئرلینڈ) سے علم نفسیات میں اختصاص کیا ہے۔ کچھ عرصہ وہیں بعض مراکز میں خدمات انجام دینے کے بعد وہ بلفاسٹ منتقل ہوگئے، جہاں ایک ہاسپٹل میں بہ طور ماہر نفسیات خدمت انجام دیتے ہیں اور کوین یونی ورسٹی میں نفسیات کی تدریس کرتے ہیں۔ یہ تفصیل بتانے کی ضرورت اس لیے محسوس ہوئی، تاکہ اندازہ لگایا جاسکے کہ کتاب میدان میں کام کرنے والے شخص کے قلم سے نکلی ہے اور تجربات سے بھرپور ہے۔

کتاب 4ابواب اور 30 فصول پر مشتمل ہے۔ اس میں بچوں کی نفسیات کا تذکرہ کرتے ہوئے ان کی تربیت کے طریقوں پر نفسیاتی اصولوں کی روشنی میں گفتگو کی گئی ہے۔ امید ہے، بچوں کی تربیت کے ساتھ یہ کتاب والدین، اساتذہ اور زوجین کے لیے بھی بہت سی نفسیاتی الجھنوں سے نجات کا ذریعہ بنے گی۔

برادر طارق ایوبی کا قلم رواں ہے۔ وہ عرصہ سے اپنے تعلیمی ادارے ‘مدرسۃ العلوم الاسلامیہ’ علی گڑھ (جس کے وہ مہتمم ہیں) کے ترجمان ماہ نامہ ‘ندائے اعتدال’ کے مدیر ہیں۔ اس میں شائع ہونے ان کے مضامین اور اداریوں کو علمی حلقوں میں مقبولیت حاصل ہوئی ہے۔ ان کی تحریروں میں فکر کی گہرائی کے ساتھ جذبات کی فراوانی بھی پائی جاتی ہے۔ ایک درجن سے زائد طبع زاد کتابوں کے علاوہ انھوں نے متعدد کتابوں کا عربی سے اردو میں ترجمہ کیا ہے، جن میں سے خاص طور پر ترکی صدر رجب طیب اردگان پر ان کے ترجمہ کو ہند و پاک میں مقبولیت حاصل ہوئی تھی اور دونوں جگہوں سے اس کی اشاعت ہوئی ہے۔ ان کی طبع زاد تحریروں کی طرح ترجمے میں بھی روانی پائی جاتی ہے۔

امید ہے، اس کتاب کو علمی حلقوں میں مقبولیت حاصل ہوگی اور تربیتِ اطفال سے دل چسپی رکھنے والے بھی اسے ہاتھوں ہاتھ لیں گے۔

صفحات :424
قیمت :300 روپے
ناشر :حجۃ الاسلام اکیڈمی، دار العلوم وقف دیوبند
Tags
Show More

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button